جنرل (ر) پرویز مشرف خود کو اور پاکستان کو لازم و ملزوم سمجھتے تھے حالانکہ صورت حال لازم و ملزوم نہیں، ظالم و مظلوم والی تھی۔ موصوف اپنی ذات کے عشق میں کچھ اس بری طرح مبتلا تھے کہ مجھے یقین ہے اپنی سالگرہ پر وہ اپنے اہل خانہ کو مبارک باد کا پیغام بھیجتے ہوں گے۔ جنرل صاحب خود کو عقل کل سمجھتے تھے اور یوں انہیں یقین تھا کہ اس بے عقل قوم کی رہنمائی ان پر فرض ہے۔ وہ اس فرض کو ”فرضِ کفایہ“ بھی نہیں سمجھتے تھے کہ پوری قوم میں سے کوئی اور فرد بھی یہ فرض دا کرے تو گزارا ہو سکتا ہے۔ انہیں یقین تھا کہ یہ فرض صرف اور صرف وہی ادا کر سکتے ہیں۔ ان دنوں موصوف ”جلا وطن“ ہیں مگر ان کے آقاؤں نے ان کی خدمات کے اعتراف میں ان کے لیکچرز کی صورت میں ان کا مستقل وظیفہ مقرر کیا ہوا ہے اور وظیفے کی یہ رقم اتنی زیادہ ہے کہ ماضی کے بڑے بڑے مدبروں کا ”ریٹ“ بھی شاید اتنا نہ لگا ہو۔ سوویت یونین کو پارہ پارہ کرنے والے گوربا چوف بھی مغرب کی اسی طرح کی عنایات سے بہرہ ور ہوتے رہے ہیں اور پاکستان کی وحدت کو پارہ پارہ کرنے کی ممکن حد تک کوشش ہمارے جنرل صاحب نے بھی کی تھی، گو وہ اس میں پوری طرح کامیاب نہیں ہوئے لیکن نیت کا ”اجر“ تو بہرحال ملتا ہے اور مغرب یہ اجر اتنی بھاری مقدار میں انہیں ادا کر رہا ہے کہ جنرل صاحب اب لندن میں پہلے سے کہیں زیادہ قیمتی فلیٹ خریدنے کا منصوبہ بنا رہے ہیں۔
جنرل (ر) پرویز مشرف کبھی ق لیگ والوں کے قبلہ و کعبہ تھے چنانچہ اس کے رہنما ادب کی وجہ سے ان کی طرف پیٹھ کر کے نہیں بیٹھتے تھے یا یہ ان کی احتیاط کا تقاضا تھا کیونکہ موصوف کا ریکارڈ پیٹھ میں چھری گھونپنے کا رہا تھا جس کا مظاہرہ ایک سرکاری ملازم ہوتے ہوئے پاکستانی عوام کے منتخب وزیر اعظم اور ان کی حکومت کو گھائل کرنے کی صورت میں سب کے سامنے تھا۔ آج کل موصوف اپنی قوم کی بے قدری اور نامردم شناسی کے رویے پر یقینا شاکی نظر آتے ہوں گے کہ اپنی عقل و دانش کے بل بوتے پر پوری دنیا کو غلام بنانے والے اہل مغرب تو ان کی دانائی سے فیض اٹھانے کے لئے انہیں مختلف فورموں پر بھاری معاوضے ادا کر کے مدعو کرتے ہیں لیکن ان کی قوم جس کی خاطر انہوں نے پورے نو سال ”بادل نخواستہ“ اقتدار میں رہنا قبول کیا نہ صرف یہ کہ انہیں گھاس نہیں ڈالتی بلکہ ان کے نام سے بھی الرجک ہے تاہم یہ ان کی اعلیٰ ظرفی ہے کہ اس کے باوجود وہ دیارِ مغرب میں رہتے ہوئے اس بے وقوف اور احسان فراموش قوم کو اپنے رہنما قسم کے بیانات سے نوازتے رہتے ہیں چنانچہ انہوں نے اپنے ایک حالیہ بیان میں ارشاد فرمایا ہے کہ نواز شریف اندر سے طالبان ہیں۔ ممکن ہے یہ بیان پاکستانی قوم کو خبردار کرنے کے لئے نہیں بلکہ امریکہ کو خبردار کرنے کے لئے دیا ہو کیونکہ موصوف کی بیڑیوں میں ”وٹے“ نواز شریف ہی نے ڈالے ہیں۔ اگر میری یہ ”بدگمانی“ صحیح ہے تو پھر یہ بیان ایک پنجابی گانے ۔گھر جا کے شکایت لاواں گی …ہی کی ایک صورت ہے۔ موصوف نے اسی ”حکمت عملی “ کے تحت سرحد کے ”مولویوں“ سے امریکہ کو ڈرا کر اپنے اقتدار کو طول دیا تھا اور اب وہ پاکستانی عوام کے مقبول ترین رہنما نواز شریف کو ہوّ ا بنا کر امریکہ کے سامنے پیش کر رہے ہیں۔ جنرل صاحب کا خیال ہے کہ مغرب میں نواز شریف کو ”مولوی نواز شریف“ بنا کر پیش کرنے سے ان پر آنے والا عذاب ٹل سکتا ہے لیکن ”بدقسمتی “ سے ہمارے پاکستان کی مذہبی جماعتیں اس تاثر کو تقویت دینے کی راہ میں حائل ہیں کیونکہ نواز شریف کی بھرپور مخالفت اگر کہیں سے ہو رہی ہے تو وہ انہی مذہبی جماعتوں کی طرف سے ہے۔ اسی طرح طالبان بھی پرویز مشرف کے متذکرہ بیان کو پھلنے پھولنے کا موقع دینے کے لئے تیار نہیں کیونکہ نواز شریف اور شہباز شریف کی زندگی کو سب سے زیادہ خطرہ طالبان ہی کی طرف سے ہے۔ بہرحال پرویز مشرف صاحب کا کام امریکہ کو ”نیک و بد“ سمجھانا ہے چنانچہ وہ اس عالمی طاقت کو قائل کرنے کے لئے اپنے بیان کی سپورٹ میں یہ دلیل بھی دے سکتے ہیں کہ نواز شریف نے آج تک جام اپنے سر پر رکھ کر مستانہ وار رقص نہیں کیا چنانچہ اس سے ثابت ہوتا ہے کہ وہ طالبان ہیں۔ پرویز مشرف صاحب کو اگر اس حوالے سے مزید دلائل درکار ہوں تو وہ اپنی خلوت اور جلوت کے بہت سے گفتہ اور ناگفتہ واقعات کا حوالہ دیتے ہوئے امریکہ کو بتا سکتے ہیں کہ نواز شریف کی زندگی اس زندہ دلی سے بالکل خالی ہے لہٰذا ثابت ہوا کہ نوازشریف طالبان ہیں۔
ابھی اس موضوع پر مزید بہت کچھ کہنے کو جی چاہتا تھا لیکن اس سے اداکارہ میرا کی حق تلفی کا خدشہ تھا کیونکہ موصوفہ بھی جنرل موصوف کی طرح ہماری توجہ کی مستحق ہیں۔ میں پرویز مشرف صاحب اور اداکارہ میرا دونوں سے معذرت خواہ ہوں کہ ایک سانس میں دونوں کا نام لے رہا ہوں۔ اس کی وجہ دونوں شخصیتوں کی باہمی ہم آہنگی نہیں بلکہ اسے محض اتفاق ہی سمجھا جا سکتا ہے۔ دراصل میرا کے اس بیان نے مجھے اپنی طرف اس بری طرح متوجہ کیا ہے کہ میں جنرل صاحب کا تذکرہ درمیان میں چھوڑ کر موصوفہ کی طرف متوجہ ہو گیا ہوں۔ اداکارہ میرا نے کہا ہے کہ ”فیصلہ تو عدالت کرے گی لیکن میرے چاہنے والے جانتے ہیں کہ میں نے زندگی میں کبھی جھوٹ نہیں بولا“۔ میرا نے یہ بیان اپنے مبینہ شوہر عتیق الرحمن کی طرف سے دائر کئے گئے مقدمے کے حوالے سے دیا ہے۔ میرا کہتی ہیں کہ میں عتیق الرحمن کو جانتی تک نہیں اور عتیق الرحمن کا کہنا ہے کہ پہلے کچھ عرصے تک میرا سے ان کا رومانس چلتا رہا اور پھر اس کی درخواست پر انہوں نے بال بچے دار ہونے کے باوجود اس سے شادی کر لی اور ہنی مون منانے کے لئے بیرون ملک گئے۔ عتیق الرحمن نے نکاح نامہ اور نکاح خواں دونوں میڈیا کے سامنے پیش کر دیئے۔ مزید برآں وہ ویڈیو فلم بھی ٹی وی چینلز کے ذریعے ہم دل جلوں کو دیکھنے کو ملی جس میں میرا اور عتیق الرحمن ہیرو ہیروئن جیسی حرکتیں کرتے نظر آ رہے ہیں بلکہ اب تو تفتیشی افسر نے جو باریش پولیس آفیسر ہیں، میڈیا کو اپنی تفتیش کا نچوڑ یہ بتایا ہے کہ میرا نے واقعی عتیق الرحمن سے شادی کی تھی۔
یہ سب گواہیاں اپنی جگہ لیکن میرا کی گواہی کی اہمیت سے بھی انکار ممکن نہیں کیونکہ اس کی گواہی کی لپیٹ میں اس کے درجنوں، بیسیوں، لاکھوں یا کروڑوں چاہنے والے بھی آتے ہیں جن کے حوالے سے میرا نے کہا ہے کہ وہ سب جانتے ہیں میرا نے پوری زندگی میں کبھی جھوٹ نہیں بولا۔ میرا کے اس بیان کے بعد سے میں اچھے خاصے پرابلم کا شکار ہوں۔ میں ہر آئے گئے سے پوچھتا ہوں کہ کیا تم میرا کے چاہنے والوں میں سے ہو؟ اور وہ جواب میں میرا منہ تکنے لگتے ہیں۔ صرف ایک نے کہا کہ ہاں وہ اسے دل و جان سے چاہتا ہے۔ میں نے پوچھا ”کیا واقعی میرا نے زندگی میں کبھی جھوٹ نہیں بولا؟“ اس پر اس نے جھنجھلا کر کہا ”میں میرا نہیں، ریما کی بات کر رہا ہوں، ماشاء اللہ خوبصورت ہے، صوم و صلوٰة کی پابند ہے، سلائی کڑھائی بھی جانتی ہے ، میری والدہ کسی ایسی ہی لڑکی کی تلاش میں ہے“۔ ریما کو لڑکی کہنے والے اس شخص کے ارادوں کے علاوہ اس کی بینائی پر بھی مجھے شک گزرا چنانچہ میں نے اسے اس کے حال پر چھوڑ دیا۔ اس دوران ایک اور صاحب سے ملاقات ہوئی، وہ البتہ میرا کے چاہنے والے نکلے، میں نے ان سے پوچھا ”کیا واقعی میرا نے زندگی میں کبھی جھوٹ نہیں بولا؟“ بولے ”میں کیا کہہ سکتا ہوں کیونکہ میری کبھی اس سے ملاقات ہی نہیں ہوئی“ میں نے کہا ”فلمیں تو دیکھی ہوں گی“ انہوں نے جواب دیا ”ہاں ایک فلم دیکھی ہے جو عتیق الرحمن کے ساتھ ہے۔ اس میں میرا کی اداکاری لاجواب ہے!“ میرا کے اور بہت سے چاہنے والے بھی اسی طرح کی کچی پکی باتیں کرتے رہے لہٰذا میں اس سلسلے میں کسی نتیجے تک نہ پہنچ سکا ، لہٰذا میں میرا سے متفق ہوں کہ ”فیصلہ تو عدالت ہی کرے گی“ سینیٹر پرویز رشید نے جنرل پرویز مشرف کے بارے میں بیان دیا ہے کہ وہ جھوٹ بولتے ہیں اور انہوں نے اپنی کتاب میں اس کا اعتراف بھی کیا ہے جبکہ اداکارہ میرا نے اپنے بارے میں پورے یقین سے کہا ہے کہ انہوں نے زندگی میں کبھی جھوٹ نہیں بولا۔ سینیٹر پرویز رشید کی بات تو یقینی طور پر صحیح ہے کیونکہ انہوں نے خود پرویز مشرف کے اعترافی بیان کا حوالہ بھی دیا ہے جبکہ میرا کے دعوے کی تصدیق ابھی باقی ہے اور اس کے لئے مجھے ابھی ان کے مزید چاہنے والوں سے بات کرنا پڑے گی۔

http://search.jang.com.pk

پرویز مشرف اور اداکارہ میرا- عطاالحق قاسمی

19 thoughts on “پرویز مشرف اور اداکارہ میرا- عطاالحق قاسمی

  • 30/09/2009 at 8:31 am
    Permalink

    Hellow!

    The Mr Mushraf is the one of the best ruller in pakistan
    Pakistan Has born only 2 murad ………
    1, General Pervaiz Mushraf (The President Of Pakistan)
    2, Syed Mustafa Kamal (Chief Mayor Of Karachi)

    Reply
  • 19/10/2009 at 8:59 am
    Permalink

    meera gee ki harkaten to sabit ho gaye… ab poori qoam ko aur khod meera ko yaqeen a jaye ga ke jali (duplicate) khadroon ki bad-dua nahin lagti… exp: meri maa mera baap mera bhai?

    Reply
  • 25/11/2009 at 4:12 pm
    Permalink

    Dear Mr. atta-ul-haq qasmi Mind your language please,what ever GEMERAL PERVEZ MUSHARAF had done was right see LAL MASJID action, it proved that they were linked with terrorists, how come they have terrorists present in lal masjid & jamia hafsa, why present Gov’t is responsing the orders from America now why the present Gov’t fighting Americas War on terrorism,did the present Gov’t stopped suicide bombing in Pakistan or it increased comparing with those of Pervez Musharaf’s gov’t Time, Can You say Asif Ali Zardari is the Ideal personality to be the President of Pakistan,? Can you prove any single case against Pervez Musharaf Like Assif Ali Zardari who was taking bribes and that money sending to Swiss Banks, where the cases against them are still pending and they are proved guilty, swiss banks issued arrest warrant against them and that time they were running here and their to hide, do you know how much property he have in Ras Al Khaimah Free Zone and Towers in Dubai,Do you know all the back ground work from Zardari to become Mr. Hundred person from Mr. Ten person? do you know who said this that Mr. Zardari was Mr. Ten person But Now he is Mr. Hundred Person. And can you explain the Slogan ” PAKISTAN KHAPPE”? AND WHAT IS THIS DRAMA OF RALLIES, in this tense period he want Pakistani innocence peaple to be killed, and earlier they have done it, peaple have seen these type of dramas in the resent past,do they care for the lives of poor Citizens, Most of the peaple’s Party minister are corrupt taken loans from banks with the intentions not to return it back, and whar is the story of Sugar,this is not the tactics to divert attention, do you remember the slogan of Mr Hundred person to provide ROTTI KAPRA AUR MAKAN, THAT OLD SLOGAN WHICH IS NEVER FULLFILED CAN REFUSE TO ADMIT? MY DEAR O DEAR, BEHAVE YOUR SELF.

    Reply
  • 06/12/2009 at 3:57 pm
    Permalink

    Mr Atta Ul Haq Kasimi I do not have any Doubt about your Writing talents but when the writing talents are used for evil Purpose, to mislead and misguide, Or to Take personal Revenge as Your Leader and you are dying to take, then those talents become evil and innocent People should be protected from Such evils. But The tragedy with My Country poor people is that they have been mislead by people like you and Thousands of Hamid Mirs, Kamran, Shahids, Khalils, Political Justice Iftikhar Kana and Dirtiest of all Nazir Naji.
    Your Complaint Sheet against the leader was:
    Steel Mill: Now Who will pay 32 Arab Rupees Loss, Iftikhar, You, or General Qayum, or all the Media Combined.
    Fall of Karachi Stock Market: Now it is on 7000 and fallen from 20.000. Who is responsible? and whom you will blame now?
    Rupee Dollar parity was 60 to 1 and Now it is 84 to 1. Decline of 40%. That means Every Pakistani has become poor by 40% in Dollars Term. Whom those stupids Followers will now ask?
    Lal masjid: Now when those Terrorist have started Threatening the media and now you Media People are getting Money from USA to do their Job and Crying daily against those Off shoots of Lal Masjid.
    Mehngai: Is now Kalsoom supplying Atta for 8 Rupees Per Killo?
    Is the poor People of Pakistan getting Justice? Have the Judges stopped Taking Bribe?
    Pakistani nation is so stupid that they even can not differentiate between the friends and Foes. They will always be exploited by such people as You and your group.
    You all will keep on benefitting from their Misery and settle your Revenge and Other Scores.
    May Be again You will become Ambassador?
    Iftikhara will now aspire for presidency.
    Zardari, Nawaz, Choudhries, will also get allot. But Land of pakistan will day by day fall into more and More misery.
    Though I have no hope but even then I will bring to your notice one great Country which Under the leadership of President islam karimov is progressing day By day. President Islam karimov has always kept his nation Interest at the top and have stood against every Foreign Pressure. President Mushraf also stood for the interest of the nation. But he lost Commercially Motivated To LOUD MOUTHS

    Reply
    • 19/06/2010 at 10:30 am
      Permalink

      Excellent write up, that too, very logical

      Keep up the good work.

      Reply
  • 12/07/2010 at 8:16 am
    Permalink

    Musharaf sb k bura bhala kehnay walo ub tum ko un se kia dur hai aik sanwaratay howay mulk ko tum logo ne ujar k rukh dia hia. Loog undhay nahi sub daikh rahian hai k pehlay kia tha aur ub kia hai hamrar budget IMF se manzoor ho kur aata hai wha

    Reply
  • 12/07/2010 at 8:18 am
    Permalink

    Mr. idot Atta-ul-haq qasmi apnay paisay bananay k lia Musharaf sb ko sub bura keh reh hai aap b kaho aur bewakoof logo pe hanso jo in sun pe yakeen kurtay hain

    Reply
  • 17/08/2010 at 12:16 am
    Permalink

    Some people are unaware that qasmi sahib, mian sahib kay sri payee ka khas khiyal rakhtay they yahan tak kay mudeer sau safeer ban gaye. Aur woh bhi kahan kay, Norway.

    Jahan Madar pidar azad azadi hey.

    Inko abhi bhi mian sahib ka intizar hey kionkay Norway janay ko ab bhi inka dil karta hey. waisay bhi qasmi sahib namak haram nahin. Lahori bhi hein aur mian sahib kay tufailiya bhi. Any how good job.

    Bana hay shah ka masahib phiray hey itraata
    Wagarna sheher mein ghalib ki aabroo kia hay

    Reply
  • 12/02/2011 at 4:14 pm
    Permalink

    bullshit,,,,, come on mr qasmi… come out of musharaf-phobia. he is gone. .,., talk something of present.

    Reply
  • 03/04/2011 at 8:04 am
    Permalink

    those who support musharraf can never ever be called as patriotic. He is the first person to start a civil war across the country and shed the blood of numerous pashtoons just to get a few pennies for himself. he is the first ever pakistani leader who told the world that all our streets are full of al qaeda bastards thus defaming the country and whatever we suffer today is the apparent result of his silly deeds. In fact and to be honest all pakistani rulers are just bastards, they have no feeling for their people. Pakistan can never make progress till judjement day , this is my guarentee because in a country where people like musharraf and bastard zardari are safe and making money and a hero like AQ khan is in prison is not supposed to talk about modernization and development.
    we like imran khan but i don agree with his political apporach since he is the only person of his party whom we can think of vote.

    Reply
  • 03/04/2011 at 8:10 am
    Permalink

    Pakistani nation has been badly misguided by Army, Mullahs and Politicians. In the first phase we must bycott our religeous leaders and parties bcos we see nothing on their credit since their outset. Pakistan is not the legacy of the corrupt PPP and PML-N. Youth must come forward to creat some effective blocks and save this country from the possible stupids ( Bilawal and Hamza shahbaz) in the future.
    All our religeous leaders support western agenda from the core of their heart and none of them could be trusted. western media projection has kept them alive otherwise they have no voice in the country as it is cracked up to be.
    We need industrial progress, More jobs and exports and imports and well disciplined tourism. we must kick out mullahs and out present rulers from our political corridors.

    Reply
    • 23/11/2011 at 6:04 pm
      Permalink

      Mullas have all power in Pakistan. What is happening to us (Minorities) is just because of their teaches and attitudes that they also incalculate in others. (e.g Shantinagar, Gojra, Blasphemy laws etc, etc). How can a person who knows the consequences can break these laws? Can you do something for us as well because we as the part of Pakistani nation have played our role in whatever we could do to support our country and serve everyone in our Country Pakistan. I will see for another 63 years that what would happen to us and others who are suffering just because of who they are.

      Reply
  • 10/04/2011 at 9:05 pm
    Permalink

    Qasmi Sahib k mutaliq to sirf ye kehna chahta tha k “CHOTA MUNH BARI BAAT” lekin un k “Jussa” ko dekh kr kehna prta hai k “BRA MUNH CHOTI BAAT” wesay bhi itne baray munh wali cheezay faslon(Crops) ka bra “UJARA” (Barbadi) krtay hai.

    Reply
  • 27/10/2011 at 7:19 am
    Permalink

    Attaual Haq Qasmi sb , with due appoligey and respect ,NAWAZ SHREF was the populer leader BUT not IS the populer leader know .since last three four years he proved that he is the leader of his family only ,he only moved out for long march ,when tail of his brother Shabaz shreif was under the feet of PPP. After that till today,people are dieying due to circumstances created by PPP (FALLOWING THEIR MANSHOOR GAREEB MUQAOW) And this populer leader is sitting in his Mahal and enjoying how the poor peopules are diying and bing killed in pakistan .I never voted in any election but this time ill go for voting ;,AND I LL VOTE FOR IMRAN KHAN FOR THE FIRST TIME IN MY LIFE;

    Reply
  • 29/07/2012 at 12:20 pm
    Permalink

    all writers(calum nigar)in pak are near to death,imean they have passed lot of life part.(kolu nafsen zaiqa tu mot)our beleives.but if you passed 40/50/60/70 how much you can live more,10/20/at last death should be.but they did not afraid how to face true God on the dy of judement.they forgeting the aim of life.a nice writer is guider to public.2nd tv/media all type they pulling/and falling the party/person/in pak mostely peoples are not analyses.2nd most effect off media which u write/read/see/hear .which party pay /person pay/these currept peoples bringing up /down person to person.they knows truth but they did not explain to public.they knows which black medicine they producing bring ing in market possible even 100./.theie own son take anddie.but their conscious become dead no feeling wt sin wt right they doesnot comperasismn.sosource of bad are media,becide this colum nigar news coster tv book rasala radio.khuda ra this is your country yrs childern will live think what you leaving wt u grewing khuda ra these panies sure u left here only one kuffan.2yrd zamween hi teri manzal.bye God bless this country.our feeling dead our conscious dead where we should go where we look.if u visit in the world one dog would be respected but pak nationalirrespected we r bad fron a dog.might be islamic country or west.

    Reply
  • 22/04/2013 at 2:51 am
    Permalink

    WAQI TU NAWAZ KA KUTA HEY, YEH OR IN JESEY COLMN K ZAREY HADI TO RAHI HEY NA

    Reply
  • 03/05/2013 at 10:28 pm
    Permalink

    مشرف صاحب کے دور میں ہر شخص کے پاس پیسہ تھا اور عوام اور عام لوگوں کی قوت خرید میں بھی اضافہ ہوا تھا۔ مشرف صاحب نے عوام کو لوڈ شیڈنگ سے مکمل نجات دلا دی تھی جو کہ موجودہ یا پچھلی کوئی بھی حکومت نہیں کر سکی جو کہ ایک بہت بڑی بات ہے۔ مشرف صاحب کو فوجی آمر کہنے والے پہلے اپنے
    گریبان میں جھانکیں ، ایسی بے غیرت جمہوریت سے تو ہمیں فوجی حکمران بہت ہی اچھا تھا
    See this link for proof
    https://www.facebook.com/photo.php?v=517948258268418&set=vb.100001597451992&type=2&theater

    Reply
  • 03/05/2013 at 10:29 pm
    Permalink

    Multan مشرف نے جن جن کے ساتھ اچھا سلوک کیا، وہ سب مشرف کو ڈس رہے ہیں۔ یہ جج، یہ نواز شریف، یہ زرداری، یہ ق لیگ، یہ ن لیگ جانے والے لوٹے، یہ میڈیا، یہ لال مسجد، یہ ایم ایم اے کے مولوی، اور بہت لوگ۔ یہ سب مشرف کے دور میں مشرف کی نرمی اور اسکی جمہوریت پسندی سے پروموٹ ہوتے رہے: اور بجائے شکر گزار ہونے کے یہ

    Reply
  • 03/05/2013 at 10:30 pm
    Permalink

    سب سے پہلے پاکستان ۔ Pakistan First –
    جنرل پرویز مشرف صاحب کا دور بلا شبہ ایک سنہری دور تھا ۔ 9/11 کے موقع پر درست اور جرات مندانہ فیصلہ ، ڈاکٹر قدیر کو امریکہ سے بچانے کا فیصلہ پاکستان اور ہماری آنے والی نسلوں پر احسان ہے۔ مشرف صاحب کے دور میں ہر شخص کے پاس پیسہ تھا اور عوام اور عام لوگوں کی قوت خرید میں بھی اضافہ ہوا تھا۔ مشرف صاحب نے عوام کو لوڈ شیڈنگ سے مکمل نجات دلا دی تھی جو کہ موجودہ یا پچھلی کوئی بھی حکومت نہیں کر سکی جو کہ ایک بہت بڑی بات ہے۔ مشرف صاحب کو فوجی آمر کہنے والے پہلے اپنے گریبان میں جھانکیں ، ایسی بے غیرت جمہوریت سے تو ہمیں فوجی حکمران بہت ہی اچھا تھا۔ پرویز مشرف صاحب کو اللہ زندگی دے اور پاکستان کا حاکم اعلیٰ بنائے۔ آمین۔ میرا ووٹ مشرف صاحب کے لیے ہے۔ جیوے مشرف۔ پاکستان کا بیٹا مشرف Son Of Pakistan جنرل پرویز مشرف زندہ باد پاکستان پائندہ باد

    Reply

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

%d bloggers like this: