Feb 192014
 

صبح بخیر-ڈاکٹر صفدر محمود
میں اس شخص کو تقریباً نصف صدی سے جانتا ہوں کیونکہ وہ میرا کالج فیلو تھا اور بعد ازاں سروسز میں آنے کے بعد ہماری شناسائی دوستی اور پھر قریبی دوستی میں بدل گئی۔ اس حوالے سے تقریباً اس کی ساری عملی زندگی میری آنکھوں کے سامنے ہے، میں اسے ایک نہایت سچا پاکستانی، ذہین انسان اور ایماندار سرکاری ملازم سمجھتا ہوں۔ ریٹائرمنٹ کے بعد وہ تین برس سے واشنگٹن کے ایک اہم بین الاقوامی ریسرچ انسٹیٹیوٹ میں بطور اسکالر کام کررہا ہے۔ اپنی ذہانت اور ڈپلومیٹک بیک گرائونڈ کا فائدہ اٹھا کر وہ امریکہ کے پالیسی ساز اداروں اور اہم حکومتی اہلکاروں سے دوستانہ تعلقات استوار کرچکا ہے چنانچہ میں اس کی رائے کو معتبر اور اس کے تجزیے کو اہم سمجھتا ہوں۔ Continue reading »

 Posted by at 7:15 pm
Feb 192014
 

خدا ہم پر رحم فرمائے کیونکہ ہماری حالت واقعی قابل ِ رحم ہے۔ ہم حالات و واقعات سے بے خبر نہیں کیونکہ ہم جانتے ہیں کہ وقت کا بہائو ہمارے خلاف ہے لیکن ہم آنکھیں بند کئے خود کو دھوکہ دے رہے ہیں کہ یہ بلا کسی طور ٹل جائے گی، کوئی معجزہ رونما ہو گا اور ہلاکت خیز طوفان موج ِ نسیم کی مہکتی ہوئی سانسوں میں ڈھل جائے گا۔ اس وقت ہماری بہترین حکمت ِ عملی وہی ہے جو بلی کو دیکھ کر کبوتر اپناتے ہیں… بس آنکھیں بند کرلیں اور خود کو خطرے سے اوجھل سمجھیں۔ بہرحال کبوتر ایک حوالے سے ہم سے بہتر ہوتا ہے کہ وہ بلی کو بلی ہی سمجھتا ہے، اُسے ’’اپنے بندے‘‘ یا ’’قابل ِ مذمت سرگرمیوں میں ملوث کچھ بھٹکے ہوئے لوگ‘‘ قرار نہیں دیتا۔ اقبال نے ’’یک قطرہ خون ‘‘ اور ’’یک مشت ِ پر داری‘‘ Continue reading »

Jun 172012
 

ہم سب جانتے ہيں کہ بحريہ ٹاؤن کے ملک رياض حسين صاحب کس شہرت کے مالک ہيں??? صدر اور وزرائے اعظم صاحبان سے دوستي ، تمام اہم سياسي جماعتوں سے قريبي تعلقات، سابقہ جنرل اور اَ ئيرمارشلز، ملازمين ، رياست کے چوتھے ستون کا جھکاؤ سب نہيں تو کچھ اُن کي دريا دلي سے فيض ياب? چنانچہ ايک قدم آگے بڑھاتے ہوئے ہم پورے وثوق سے کہہ سکتے ہيں کہ نہر سوئيز کے اِس پار ان جيسا شاطر شخص Continue reading »

 Posted by at 12:30 am
Jun 152012
 

روزن ديوار سے -عطاء الحق قاسمي

يہ علامتي کالم ميں نے آج سے 32سال پہلے لکھا تھا? جنرل ضياء الحق صاحب نے اقتدار پر تازہ تازہ قبضہ کيا تھا اور ہر طرف سے مبارک سلامت کي صدائيں سنائي دے رہي تھيں، اس نقار خانے ميں يہ کالم ايک Continue reading »

 Posted by at 9:22 pm
Jun 082012
 

چوراہا-حسن نثار

شہباز چڑیوں سے ڈر گیا“ سچ یہ ہے کہ اس بدنصیب معاشرے میں ایسی ہی ان ہونیاں ہو رہی ہیں کہ قدم قدم پر منیرنیازی یاد آتا ہے جس نے کہا تھا … ”یہاں کیچوے سانپوں کی وردیاں پہنے پھر رہے ہیں“ واقعی یہاں رہزنوں نے رہنماؤں کے روپ دھار رکھے ہیں، سوداگر صوفی بنے پھرتے ہیں، عطائی ڈاکٹر کہلاتے ہیں، بے سرے بے تالے تان سین کے طور پر جانے جاتے ہیں، بازی گر اور رنگ باز سیاستدان کے طور پرمشہور ہیں، جرائم پیشہ پولیس میں بھرتی کئے گئے، چور چوکیدار بن بیٹھے، سڑکیں بنانے والے سڑکیں کھانے لگے، محافظ قاتل نکلے اور معزز کہلائے، مذہبی رہنماؤں نے منافرت کو ہوا دی، طالبعلم تخریب کار Continue reading »

 Posted by at 9:25 pm
Jun 082012
 

 معروف تجزیہ کار، کالم نگار و سینئر صحافی حسن نثار نے کہا ہے کہ حالات ایسے ہوگئے ہیں کہ زندہ ضمیر لوگوں کو ہنستے ہوئے اور پیٹ بھر کر کھاتے ہوئے شرم آتی ہے۔ہمارے حکمرانوں کے اندر دل نہیں Continue reading »

 Posted by at 9:18 pm
Jun 012012
 

حکومت کا آئندہ مالی سال 2012-13ءکیلئے 29 کھرب 60 ارب روپے حجم کا مسلسل پانچواں قومی بجٹ پیش کر دیا گیا 

تنخواہوں اور پنشن میں 20 فیصداضافہ، سیمنٹ، چائے، اسٹیشنری، مشروبات، دوائیں سستی، گیس، سگریٹ، سریا مہنگا                                                                          Continue reading »

 Posted by at 9:04 pm